81

ممتاز سائنسدان اسٹیفن ہاکنگ 76 برس کی عمر میں انتقال کرگئے

لندن: ممتاز برطانوی سائنسدان اسٹیفن ہاکنگ 76 برس کی عمر میں انتقال کرگئے۔
خاندان کے ترجمان نے اسٹیفن ہاکنگ کے انتقال کی تصدیق کرتے ہوئے گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے، اسٹیفن گزشتہ 4 دہائیوں سے زائد عرصے سے پیچیدہ بیماری میں مبتلا تھے اور ویل چیئر پر بیٹھ کر سائنسی میدان میں خدمات انجام دے رہے تھے۔

بلیک ہولز،نظریہ اضافیت پر انقلابی تحقیقاتی مقالے لکھنے پر اسٹیفن ہاکنگ کو آئنسٹائن کے بعد دوسرا سب سے بڑا اور باصلاحیت سائنس دان سمجھا جاتا تھا، ان کا زیادہ تر کام بلیک ہولز اور تھیوریٹیکل کاسمولوجی کے میدان میں ہے۔

اسٹیفن کی طویل عمر جسمانی معذوری میں گزری جس کی وجہ سے وہ نہ ہی بول سکتے تھے اور نہ ہی چل پھر سکتے تھے لیکن دماغی طور پر مکمل صحت مند تھے۔

اسٹیفن اپنے خیالات دوسروں تک پہنچانے اور اسے منتقل کرنے کے لیے ایک خاص کمپیوٹر کا استعمال کرتے تھے جو ان کی پلکوں کے اشاروں کو الفاظ دے کر بات سمجھانے کا کام کرتا تھا۔

گزشتہ برس برطانیہ کی کیمبرج یونیورسٹی کی جانب سے اسٹیفن ہاکنگ کے 1966ء میں کیے گئے پی ایچ ڈی کا مقالہ جاری کیا گیا جس نے چند ہی روز میں مطالعے کا ریکارڈ توڑا۔

اسٹیفن کے مقالے کو چند روز کے دوران 20 لاکھ سے زائد مرتبہ پڑھا گیا اور 5 لاکھ سے زائد لوگوں نے اسے ڈاؤن لوڈ کیا۔

اسٹیفن ہاکنگ کی کتاب ‘بریف ہسٹری آف ٹائم’ ایک شہرہ آفاق کتاب ہے جس کی ایک کروڑ سے زائد کاپیاں فروخت ہوئیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں